منگل، 15 مئی، 2012

آخر ہمارا بلوگ پچاس ہزاری بن گیا !


آخر ہمارا بلوگ پچاس ہزاری بن گیا !

کافی عرصہ پہلے جب ہمارا تعارف انٹر نیٹ سے ہوا تھا اور جب ہم نے کچھ پرسنل بلاگس دیکھے تو ہمارے دل میں بھی یہ خیال مچلنے لگا کہ کیوں نہ ہمارا بھی ایک 'ڈبلیو ڈبلیو ڈبلیو ' ہو۔ ۔ ۔ بس جناب خیال کا آنا تھا کہ آناً فاناً ایک بلوگ بھی تیار ہو گیا  چونکہ اردو شاعری سے ہمارا رشتہ بچپن سے ہی  کافی مضبوط رہا ہے اس لیے ہم نے میدان شاعری کا شہسوار بننا ہی مناسب سمجھا اور " نقوش سخن " کے عنوان سے پوسٹنگس شروع کر دی۔
ہماری اولین پوسٹنگس کیا تھی ؟ جناب موبائل پر  رومن اردو میں کوئی شعر ٹائپ کیا اور بلوگر کو میل کر دیا۔ یہ سلسلہ کچھ دنوں تک چلتا رہا اور اس زمانہ میں ہم اپنے بلوگ کے واحد ریڈر ہوا کرتے تھے۔
گذشتہ سال ہم نے کمپیوٹر خریدا ۔ ۔سب سے پہلے حضرت ماؤس سے دوستی کی ۔ ۔ ۔ کیونکہ انہیں میں کسی اور طرف چلانا چاہتا اور وہ کسی اور طرف چلتے۔۔۔اس کے بعد ماشاءاللہ کچھ اپنی ذاتی قابلیت اور گوگل کی دوستی کام آئی اور انتہائی قلیل عرصہ میں ان پیج ، ٖوٹو شاپ اور کورل ڈرا ہمارے آگے سر تسلیم خم کرنے لگے۔
کچھ SEO  کی برکتیں اور کچھ ہماری اپنی کوششیں رنگ لائی اور ماشاءاللہ آج اگر آپ گوگل میں Urdu Shairy سرچ کریں تو ہمارا بلوگ ٹاپ ٹین کی فہرست میں نظر آئیگا اور اگر آپ Urdu Shairy in Urdu font  تلاش کریں تو الحمدللہ ہمارا بلوگ سر فہرست نظر آئیگا۔
گذشتہ  3 مہینہ سے ہمارے بلوگ کے زائرین کی تعداد اوسطاً چھ ہزار سے زائد ہے جو  خالص اردو شاعری سے متعلق محض  130 پوسٹس والے بلوگ کے لیے نہایت خوش آئند بات ہے۔


7 تبصرے:

  1. کامیابی مبارک ہو
    ایک وضاحت چاہتا ہوں ۔ یہ 6000 تعداد قاری فی تحریر ہے روزانہ ہے ہفتہ وار ہے یا ماہانہ ؟

    جواب دیںحذف کریں
  2. نوازش افتخار صاحب !

    جناب یہ تعداد ما ہانہ ہے

    جواب دیںحذف کریں
  3. بہت خوب جناب، آپ کو مبارک ہو

    جواب دیںحذف کریں
  4. مبروک !
    گذشتہ سالوں میں اردو بلاگنگ کا رجحان زور پکڑا ہے اور اس کے خاظر خواہ ۔نتائج بھی سامنے ہے

    جواب دیںحذف کریں
  5. السلام علیکم

    بہت ہی بہترین ہے بھائی آپ کا بلاگ سچ میں ۔۔اللہ مبارک کرے

    جواب دیںحذف کریں
  6. ماشاء اللہ بہت ہی پیارا بلاگ ہیں۔۔

    جواب دیںحذف کریں

غیر اخلاقی و مضمون سے مناسبت نہ رکھنےوالے تبصرے حذف کر دیے جاتے ہیں۔ اسی طرح ذاتیات پر تنقید و نظریاتی اختلافات کی بناء پر انتہا پسندی والے تبصرے بھی شامل نہیں کئے جائیں گے۔